Connect with us

خبریں

ہنزہ کریم آباد میں ڈپٹی کمشنر کی جانب سے کھلی کچہری منعقد

رحیم امان

Published

on

(رحیم امان ، رحیم اللہ بیگ) ) کریم آباد ہنزہ میں سید علی اصغر ڈپٹی کمشنر ضلع ہنزہ کی جانب سے منعقدہ کھلی کچہری میں کریم آباد کے عوام اور سول سوسائٹیز اور دیگر اداروں کے نمائندوں کی جانب سے ہنزہ کریم آباد سیوریج لائین کی خستہ حالی،رابطہ سڑکوں کی تعمیر، خواتین ہسپتال کی فعالی، پینے کے صاف پانی کی عدم موجودگی ، سیلاب کے باعث تباہ شدہ پانی کے چینلوں کی مرمت ، ذمینوں کا کمپنسیشن ، صفائی کا فقدان، گرلز ہائی سکول کی بلڈنگ کی خستہ حالی ، رابطہ سڑکوں کی ٹینڈر میں تاخیر ، ڈسٹرکٹ بیس فیصد فنڈ کے اجراہ میں تاخیر سمیت کئی مسائل اور شکایات کے ڈھیر لگائے ۔ 

ہنزہ ڈپٹی کمشنر ہنزہ کی جانب سے تمام لائین ڈیپارٹمنٹ کے عہداران کے ہمراہ کریم آباد ہنزہ کے عمائدین و نوجوانان کے ساتھ کھلی کچہری کا انعقاد۔ 

کریم آباد کے مسائل کو اولین ترجیح دیکر حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ سعید علی اصغر
ہنزہ ڈیپٹی کمیشنر ہنزہ کے جانب سے کریم اباد ہنزہ کے مسائل سننے کے لیے عمادین کریم آباد اور یوتھ کے ساتھ کھلی کچہری کا انعقاد کیا ۔اس اہم اجلاس کا انعقاد کرنے کا مقصد کریم اباد کے مسائل کو سننا تھا۔ اس کھلی کچہری میں ہنزہ کے تمام لائن ڈیپارٹمنٹز کے اعلٰی عہداران نے بھی شرکت کی۔اس کھلی کچہری میں کریم آباد سمیت ہنزہ کے تمام مسائل کے پر مختلف محکوں کی جانب سے عوام کو بریفنگ دی گئی۔

اس موقع پر کریم آباد کے سول سوسائٹیز کی جانب سے کریم آباد ہنزہ کا سب اہم مسلہ پچیس سالہ پرانہ سیوریج لائین کا اٹھایا گیا اس موقع پر سول سوسائٹیز کے مشترکہ موقف پیش کرتے ہوئے کہا گیا کہ کریم آباد سیاحوں اور بین الاقوامی وفود کا مرکز ہے اور گلگت بلتستان اور پاکستان کا مثبت چہرہ پیش کرنے میں ہنزہ کریم آباد کا اہم کردار رہا ہے ، کریم آباد ،گنش اور مومن آباد کی تاریخی اور سیاحتی حیثیت کو مد نظر رکھتے ہوئے پچیس سال پہلے اپنی مدد آپ اور ڈونر کی فنڈز کی مدد سے سیوریج کا نظام قائم کیا گیا تھا ،آج یہ سیوریج لائین اپنی مدت پوری کرنے کی وجہ سے خستہ حالی کا شکار ہے،اگر حکومت ااس منصوبے کی بروقت مرمت نہیں کرے گی تو سیاحت کے سیزن میں یہ بہت بڑا ماحولیاتی ڈزاسٹر ہو سکتا ہے۔

ہنزہ ۔ کریم آباد ہنزہ ڈپٹی کمشنر کی جانب سے منعقدہ کردہ کھلی کچہری میں عوام کے مسائل سنے جارہے ہیں

اس موقع پر ڈیپٹی کمشنر ہنزہ سعید علی اصغر نے ہنزہ اکا مجموعی صورت حال اور مجموعی سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ کھلی کچہری رکھنے کا مقصد اور اس کا فائدہ یہ ہے کہ یہان بیک وقت زندگی کے تمام طبقات کے ساتھ ملنے اور ان کو سن کا موقع ملتا ہے جس کی وجہ سے کلی صورت حال کو سمجھنے کا موقع ملتا ہے۔ واٹر چینل کی مرمت کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ التت اور بلتت کے تمام واٹر چنلز کی مرمت کے لیے 3 کروڑ 45 لاکھ روپے رکھے گئے ہیں۔

کمپنسشن کے حوالے سے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ابھی تک پرانا ریٹ چل رہے ہیں ۔اور ترقیاتی پروجیکٹ کے لیے استعمال ہونے والا زمین کا پرانا ریٹ ہی دیا جائے گا ہم نے پورئے ہنزہ کے لیے New Land Compancation Proposial جمع کروایا ہے منظوری کے بعد ہی نئے ریٹ دئیے جا سکتے ہیں یاد رہے کہ ضلع ہنزہ میں زمینوں کا سرکاری ریٹ بہت کم ہونے کی وجہ سے ترقیاتی کاموں کے لیے زمینوں حصول مشکل سے مشکل تر ہوتا جا رہا ہے ۔

ہنزہ ۔ کریم آباد ہنزہ ڈپٹی کمشنر کی جانب سے منعقدہ کردہ کھلی کچہری میں عوام کے مسائل سنے جارہے ہیں

ڈیپتی ہیلتھ آفیسر نے کہا کہ جب میں نے ہنزہ میں چارج سنبھالا تھا تب ہنزہ میں صرف دو ڈاکٹرز تعنات تھے اب ہم سے پورے ہنزہمیں 14 ڈاکٹرز تعنتات کیے ہیں جس کی وجہ پہلے کے نسبت صورت حال کافی بہتر ہوا ہے۔
اس موقع پر کیپٹن ریٹائیرڈ سید علی اصغر ڈپٹی کمشنر ضلع ہنزہ نے تمام متعلقہ محکموں کے افسران کو تمام شکایات کا اذالہ کرنے اور کام میں تیزی پیدا کرنے کی ہدایات دئیے اور آئندہ چند ہی دنوں میں کارکردگی کو بہتر بنانے اور عوام کو سہولیات فراہم کرنے کی ہدایات دیئے۔

اس موقع پر کریم آباد کا سب سے اہم مسلہ سیوریج کے مین لائینوں کی مرمت کرنے اور سیوریج کے نظام کو سیاحت کے سیزن میں خراب ہونے سے بچانے کے لیے احکامات جاری کئیں۔

Advertisement
Click to comment

خبریں

ضلع ہنزہ کے وادی شمشال کے کرونا وائرس قرنطینہ میں موجود افراد کے مطالبات

رحیم امان

Published

on

ضلع ہنزہ کے وادی شمشال کے کرونا وائرس قرنطینہ

ہنزہ (رحیم امان) ٹی بی ٹیکنیشن بشارت کے پاس چیک اپ کے لیے آنے والے شمشال سے تعلق رکھنے والے دو ٹی بی مریض سمیت بارہ افراد اب تک قرنطینہ میں ہیں جبکہ بشارت ٹی بی ٹیکنیشن کا ریزلٹ منفی آنے کے بعد قرنطینہ میں رکھنا بلاجواز ہے، ضلعی انتظامیہ جلد رپورٹ منگوا کر قرنطینہ سے رہا کریں۔ قرنطینہ میں موجود متاثرین کا مطالبہ۔

تفصیلات کے مطابق 29 اپریل کو ہنزہ کے دور افتادہ وادی شمشال سے تعلق رکھنے والے دو ٹی بی کے مریض ٹی بی ٹیکنیشن بشارت کے پاس چیک اپ کے لیے آئے جن کے ساتھ دیگر دس افراد بھی شامل تھے۔ جب وہ لوگ شمشال واپس پہنچے تو ٹی بی ٹیکنیشن بشارت حسین کا کورونا وائرس ٹیسٹ مثبت آنے کی اطلاع موصول ہو گئی جس کے بعد ان بارہ افرا د، کو جن میں چار خواتین بھی شامل ہیں اور دو ٹی بی کے مریض بھی شامل ہیں، کو یکم اپریل کو شمشال سے واپس لاکر قرنطینہ منتقل کیا گیا اور اسی دن کورونا ٹیسٹ بھی لیاگیا لیکن آج تک ان کا نتیجہ موصول نہیں ہوس ہے جبکہ ان کے ساتھ جن کاٹیسٹ لیا گیا ان سب کا ٹیسٹ منفی آنے کے بعد انہیں قرنظینہ سنٹر سے چھوڑا گیا ہے۔جس شک کی بنیاد پر انہیں قرنظینہ منقل کیا گیا تھا ٹی بی کنٹرول پروگرام کے ٹیکنیشن کبشارت حسین سے چیک اپ کروانے کے بعد تو خود بشارت حسین کے ٹیسٹ کا نتیجہ منفی آیا ہے۔

قرنطینہ میں موجود وادی شمشال کے افراد نے ٹیلی فون پر بات کرتے ہوئے ضلعی انتظامیہ سے یہ مطالبہ کیا ہے کہ جس شک کی بنیادانہیں قرنطینہ منتقل کیا گیا تھا اب اس کا نتیجہ منفی آنے کے بعدکوئی جواز نہیں بچتا کہ ہمیں مزید قرنطینہ میں رکھا جائے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ان کے ٹیسٹ کے نتائج جلد حاصل کرکے انہیں قرنطینہ سے رہا کیا جائے۔

Continue Reading

خبریں

سیڈو گلگت بلتستان کی جانب سے ہنزہ انسداد تمباکو مہم جاری

رحیم امان

Published

on

Smoking in Hunza

ہنزہ (رحیم امان) سیڈو گلگت بلتستان کی جانب سے ہنزہ انسداد تمباکو مہم جاری، عوام الناس کو تمباکو خاص کر سگریٹ کے دھواں کے ساتھ کورونا وائرس کی تیزی سے پھیلاو کے خطرے سے آگاہ کرنے کے اور وبا کے دوران تمباکو نوشی کے عادی افراد لاحق خطرے سے آگاہ کرنے کے لیے پمفلٹ کی تقسیم کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق ہنزہ بھر میں حکومت گلگت بلتستان اور غیر سرکاری و فلاحی ادارہ سیڈو کا مشترکہ مہم کے تحت تمباکو نوشی اور تمباکو نوشی کے متعلق قوانین کی عمل درآمد کے لیے دفعہ 144 پہلے سے ہی لاگو ہے جس کے تحت کم عمر بچوں کو سگریٹ بھیجنے،کھلا سگریٹ فروخت کرنے کے ساتھ ساتھ تعلیمی اور صحت عامہ کے اداروں کے اطراف میں پچاس میٹر تک تمباکو نوشی سے متعلق اشیاء کی خرید وفروخت پر پابندی عائد ہے۔

کورونا وئرس سے پیدا شدہ صورتحال میں بھی سیڈو گلگت بلتستان کا مہم جاری ہے جس کے تحت ہنزہ میں عوام الناس کو تمباکو نوشی کے نقصانات اور خاص کر ان حالات میں جب کہ کورونا وبا پھیل رہی ہے تمباکو نوشی کے مضر اثرات بڑھ رہے ہیں اس صورتحال حال سے آگاہ کرنے کے لیے مہم جاری ہے عوام الناس کو بروشرز اور پمفلٹ کے ذریعے آگاہی دینے کا سلسلہ جاری ہے۔

اس سلسلے میں کریم آباد ہنزہ اور حیدر آباد ہنزہ میں عوام الناس کو تمباکونوشی کے مضمرات اور اس سے پھیلتے اور بڑھتے ہوئے کورونا کے خطرات سے آگاہ کیا گیا۔ لوگوں میں بروشرز تقسیم کئے گئے اور آگاہی دی گئی۔ اس موقع پر سگریٹ کے کے دھواں کے ساتھ تیزی کوروناوائرس کی پھیلاو کے بڑھتے خطرات سے بھی آگاہ کیا گیا۔اس کے ساتھ ساتھ عوام الناس کو کورونا وائرس کی پھیلاو سے بچانے کے لیے عملی طور پر ہاتھوں کو سنیٹائز کروا کر کورونا کی روک تھام کے لیے کردار ادا کرنے پر زور بھی دیا گیا۔

Continue Reading

خبریں

ضلع ہنزہ میں کورونا وائرس لاک ڈاؤن کے دوران بھی تمباکو نوشی کی دکانیں کھلی

رحیم امان

Published

on

Aliabad Hunza

ہنزہ (رحیم امان) ہنزہ بھر میں جنرل سٹور،سبزی کی دکانیں اور میڈکل سٹورز کے علاوہ تمام ضروریات زندگی کی دکانیں بند مگر سگریٹ نسوار اور دیگر تمباکو نوشی کی دکانیں اور ہول سیلرز کی دکانیں جازت نہ ہونے کے باوجود کھلی ہیں۔ نسوار کے کاروبار سے منسلک افراد کورونا ٹیسٹ نہ ہونے سے کورونا کی پھیلاؤ میں تیزی آنے کا خطرہ بڑھ گیا۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس سے ملک بھر کی طرح ضلع ہنزہ میں میں بھی لاک ڈاؤن کا سلسلہ جاری ہے۔ مختلف کاروبار سے منسلک دکانوں کے لیے اوقات کار اور ایام مختص ہیں مگر ان حالات میں تمباکو نوشی کی دکانیں جن کا ذکر ضلعی انتظامیہ کی جاری کردہ لسٹ میں موجود نہ ہونے کے باوجود کھلی رہتی ہیں حالانکہ اس صورتحال میں تمباکو نوشی اور اس کا لین دین کے باعث کرونا وائرس کی پھیلاؤ کے خطرات بڑھ جاتے ہیں۔

ضلع ہنزہ میں ضلعی انتظامیہ نے مختلف کاروباروں سے منسلک دکانوں مختلف دنوں میں کُھولنے کی اجازت دے رکھی ہے اور عمل درآمد کروانے کے لیے باقائدہ نوٹس جاری کئے جاتے ہیں ہنزہ کے بیشتر علاقوں میں تمباکو نوشی سے منسلک دکانیں مسلسل کھلی رہتی ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ نسوار گلگت بلتستان میں مقامی سطح پر تیار ہوتا ہے مگر آج تک اس کی تیاری میں موجود افراد کا نہ تو کورونا ٹیسٹ ہوا ہے اور نہ اس حوالے سے حفاظتی اقدامات اٹھائے گئے ہیں اور خدشہ ہے کہ گلگت بلتستان میں نسوار کی ترسیل سے کورونا وائرس کی پھیلاؤ میں تیزی پیدا ہوئی ہے۔ دنیا کے بہت سے ممالک نے ان حالات میں تمباکو نوشی پر مکمل پابندی عائد کی ہے ان حالات کو مدنظر رکھ کراقدامات اُٹھانے کی اشد ضرورت ہے۔

Continue Reading

مقبول تریں