Connect with us

خبریں

"گلگت بلتستان پاکستان کا حصہ تھا، ہے اور رہے گا” فورس کمانڈر میجر جنرل احسان محمود خان

اسلم شاہ

Published

on

فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود خان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان پاکستان کا حصہ تھا ، ہے اور رہے گا ، پاک فوج ملک کے چپے چپے کی حفاظت کیلئے ہر وقت تیار ہے ، گلگت بلتستان کے عوام کا معیار بہت بلند ہے یہاں کے عوام عقلی اعتبار سے بھی اعلیٰ مقام رکھتے ہیں ، اسلئے گلگت بلتستان کے لوگوں کا سوچ بھی مثبت اور خوبصورت ہے آنے والے وقتوں میں گلگت بلتستان کے لوگوں کو حقوق کے لحاظ سے اچھی خبر آئیگی ، پورے ملک میں ضلع ہنزہ تعلیمی لحاظ سے ایک مقام رکھتا ہے ہمیں ہنزہ کے مسائل کا ادراک ہے بہت جلد ہنزہ آخر ہنزہ کے مختلف وفود سے ملاقات کرونگا او رہنزہ کے مسائل کے حل کیلئے مناسب اقدامات کئے جائینگے۔

ان خیالات کا اظہار فورس کمانڈر گلگت بلتستان میجر جنرل احسان محمود خان نے ہنزپریس کلب کے نمائندوں سے ملاقات میں کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ صحافت ہر اول دستے کا کام کرتا ہے جو کہ ہر محاذ پر بغیر ہتھیار اٹھائے جنگ کرتے ہیں ہنزہ پریس کلب کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کی جائیگی۔

ہنزہ پریس کلب میں فوری طور پر انٹر نیٹ مہیا کی جائیگی ، فورس کمانڈر نے ہنزہ پریس کلب کے جرنلسٹس ویلفئیر فنڈ کیلئے بھی امداد کا اعلانکیا اور ہدایات جاری کئے کہ ہنزہ پریس کلب کے مسائل کے حل اور مختلف پروگراموں اور سیمینارز میں ہنزہ پریس کلب کو خصوصی نمائندگی دی جائے۔

ہنزہ پریس کلب کے صدر رحیماللہ بیگ نے فورس کمانڈر گلگت بلتستان کو ہنزہ آمد کی دعوت دی اور ہنزہ سے تعلق رکھنے والے شہداءکی قربانیوں پر فلمائی گئی ایک یادگار ویڈیو پیش کی ہنزہ پریس کب کے سینئر نائب صدر اکرام نجمی نے ہنزہ کے مسائل سے آگاہ کیا جس میں بجلی کا بحران ، ضمنی الیکشن کا نہ ہونا ، سکیل ایک تا نو کے ملازمین کا دیگر اضلاع سے آمد اور دیگر مسائل کا ذکر کیا۔

ہنزہ پریس کلب کے سابق صدر اجلال حسین نے ششپر گلیشئیر سے پیدا ہونے والی صورتحال سے بھی آگاہ کیا جبکہ فنانس سیکریٹری علی احمد اور اسلم شاہ نے بھی ہنزہ کے مسائل کے بارے میں فورس کمانڈر کو آگاہ کیا جس پر فورس کمانڈر نے چیف سیکریٹری سمیت جلد ہنزہ کا دورہ کرکے عوامی مسائل سننے کا وعدہ کیا ۔

اسلم شاہ کا تعلق ضلع ہنزہ سے ہے اور وہ ہنزہ پریس کلب کے رکن اور ماہنامہ کنجوت ٹوڈے میگزین کے ایڈیٹر بھی ہیں

Advertisement
Click to comment

Leave a Reply

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے